Yellow Pages of Pakistan

Non Stop Infotainment By Cyber City Online!

Blog Home | About us | Yellow Pages of Pakistan | CCOL Host | CCOL Net | hussn e-Mag | Realestate Marketing | MBBS in China | Feedback us

Business & Economy

Find here post regarding Business & Economy

enter image description here

اسلام آباد (نیوزڈیسک) پاکستانی صارفین کو آئندہ چند برسوں میں فائیو جی کی ٹیکنالوجی دستیاب ہوگی، انٹرنیٹ کے استعمال اور فروغ کے حوالے سے خطے کے دیگر ممالک سے بہت آگے نکل چکے ہیں۔ چیئرمین پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی ڈاکٹر اسماعیل شاہ نے کہا ہے کہ آئندہ چند برسوں میں پاکستان کے صارفین کو فائیو جی کی ٹیکنالوجی دستیاب ہوگی، دنیا بھر کی ٹیلی کام اتھارٹیز کو جدید ٹیکنالوجیز کے باعث بڑے چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے انٹرنیشنل ٹیلی کمیونیکیشن یونین کے اشتراک سے عالمی ٹیلی کام کانفرنس کے موقع پر مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کہ ٹیلی کام کی دنیا میں پوری دنیا جدید ٹیکنالوجی کے استعمال میں ایک دوسرے سے سبقت لے جانے کی دوڑ میں شامل ہے جس سے دنیا بھر کی ٹیلی کام اتھارٹیز کو بڑے بڑے چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دنیا میں ابھی فائیو جی ٹیکنالوجی کمرشل بنیادوں پر متعارف نہیں ہوئی۔ بعض ممالک نے آزمائشی طور پر فائیو جی کے حوالے سے تجربات شروع کر رکھے ہیں۔ پاکستان میں آئندہ برسوں فائیو جی کی بروقت فراہمی کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ اس حوالے سے کام کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ ڈاکٹر اسماعیل شاہ نے کہا کہ آئی ٹی اور ٹیلی کام کا استعمال بینکنگ، صحت اور تعلیم کے شعبوں میں تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں انٹرنیٹ کے استعمال اور فروغ کے حوالے سے دیگر ممالک سے بہت آگے نکل چکا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آئی ٹی کے شعبے میں خواتین کے کردار کو بڑھانے کے لئے اقدامات ٹھوس بنیادوں پر کرنے کی ضرورت ہے۔

enter image description here

لندن(نیوزڈیسک) برطانوی ادارے ’’بزنس مانیٹرنگ انٹرنیشنل‘‘ ریسرچ (بی ایم آئی ریسرچ) نے پاکستان کو مستقبل قریب کی 10 بڑی ابھرتی ہوئی مارکیٹوں میں شامل کرلیا۔ سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق، بزنس مانیٹرنگ انٹرنیشنل (بی ایم آئی) کی تازہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان جلد ہی مینوفیکچرنگ کے حوالے سے دنیا کے ایک بڑے اور اہم مرکز کے طور پر ابھرے گا۔ بی ایم آئی نے اس رپورٹ میں بتایا ہے کہ پاکستان میں تعمیرات، ٹیکسٹائل اور آٹوموبائل سیکٹرز بھی تیزرفتار ترقی کریں گے جب کہ توانائی کی کم قیمتوں کے باعث مینوفیکچرنگ کے شعبے میں سرمایہ کاری سب سے نمایاں طور پر بڑھے گی۔

enter image description here

کراچی(ویب ڈیسک)ایک سال کے دوران پاکستان میں انٹرنیٹ کی اوسط رفتار بڑھ کر 2.5 میگابٹس فی سیکنڈ ہوچکی ہے اور اس طرح انٹرنیٹ کی اوسط رفتار میں 156 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ امریکا میں کونٹینٹ ڈیلیوری نیٹ ورک سے متعلق خدمات فراہم کرنے والے ایک امریکی ادارے ’’ایکامائی‘‘ (Akamai) نے اپنی تازہ ’’اسٹیٹ آف دی انٹرنیٹ رپورٹ‘‘ میں بتایا ہے کہ 2016ء کی پہلی سہ ماہی (یعنی جنوری سے مارچ) کے دوران پاکستان میں انٹرنیٹ کی اوسط رفتار بڑھ کر 2.5 میگابٹس فی سیکنڈ (2.5 ایم بی پی ایس) پر پہنچ گئی ہے۔ 2015ء کی اسی سہ ماہی کے دوران یہ اوسط 1.6 ایم بی پی ایس تھا۔ اس طرح موجودہ اوسط، پچھلے سال کے مقابلے میں 156 فیصد بنتا ہے۔ مذکورہ رپورٹ کے مطابق، دنیا بھر میں گزشتہ سال کے دوران انٹرنیٹ اسپیڈ میں اضافے کا اوسط 23 فیصد تھا جب کہ پاکستان کا اوسط کے دوگنے سے بھی زیادہ ہے۔رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگرچہ تھری جی اور فور جی آنے کے بعد سے پاکستان میں انٹرنیٹ کی رفتار بہت بڑھ چکی ہے لیکن اب بھی یہاں خاصے کم افراد کو انٹرنیٹ کی بہتر سہولت میسر ہے۔ مثلاً پاکستان میں صرف 4.8 فیصد انٹرنیٹ صارفین کے پاس 4 ایم بی پی ایس کا براڈبینڈ انٹرنیٹ کنکشن ہے جب کہ دنیا میں یہ اوسط 78 فیصد بنتا ہے۔ اسی طرح دنیا میں تقریباّ 8.5 فیصد صارفین کی رسائی 25 ایم بی پی ایس والے انٹرنیٹ کنکشن تک ہے؛ لیکن پاکستان میں 15 ایم بی پی ایس یا اس سے زیادہ کا انٹرنیٹ کنکشن رکھنے والے صارفین کی تعداد صرف 0.1 فیصد (یعنی ایک ہزار میں سے صرف ایک) ہے۔